فٹ پاتھ تاجروں کا نہیں ہے کوئی پُر سانِ حال پچاس دن سے بے روزگار گھوم رہے ہیں تاجران

شیموگہ:۔شہر کے گاندھی بازاراور شیوپا نائک مارکیٹ کے بالمقابل پچھلے کئی سالوں سے روزی روٹی کمانے والے فٹ پاتھ تاجران کو بے روزگار ہوئے قریب پچاس دن کا عرصہ ہوچکا ہے،لیکن اب بھی ان کا معاملہ حل نہیں ہوپایا ہے۔ سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق فٹ پاتھ تاجروں کو اپنا روزگار حاصل کرنے کاحق دیا گیا ہے،اس کے علاوہ مرکزی حکومت نے بھی وینڈرس اینڈ ہاکرس کیلئے مخصوص قوانین بنائے ہیں جس کے تحت انہیں اپنا کاروبار کرنے کیلئے حق دیاگیا ہے،مگر شیموگہ پولیس کی ستم ظرفی کی وجہ سے یہ لوگ بے روزگار ہوچکے ہیں۔ان بے روزگار تاجروں کو حقوق دلوانے کے نام پر مختلف تنظیموں کی جانب سے ان کی قیادت کا دعویٰ کیا گیا لیکن ہر کوئی ایک دن یا ایک احتجاج تک ان کے ہمدرد ثابت ہوئے،اس کے بعد میڈیا میںتصویریں شائع ہونے کے بعد یہ لوگ ان تاجروں سے چھٹکارا پا رہے ہیں۔دراصل انہیں حقوق دلوانے کیلئے مستقل جدوجہد کرنے کی ضرورت تھی،مگر ہر کوئی ان مجبور تاجروں کے چولہے پر اپنی روٹیاں سینکھنے کی کوشش کررہا ہے۔غور طلب بات یہ بھی ہے کہ یہ تاجران زیادہ تعلیم یافتہ نہیں ہیںاور ان کی رہنمائی کرنے کیلئے بھی کوئی سامنے نہیںآرہا ہے اور اگر کوئی آ بھی رہا ہے تو ان سے تاجروں کوملنے کا موقع نہیں دیا جارہا ہے کیونکہ کچھ مفادپرست تنظیمیں اور سیاسی جماعتیں نہیں چاہے رہے ہیں کہ ان تاجروں کا مسئلہ حل کردے اور وہ اپنا نام کرجائے۔ادھر اُدھر سے ان تاجروں کو مسائل سے جوجنا پڑ رہا ہے۔غور طلب بات یہ بھی ہے کہ ان تاجروںمیں سے درجنوں تاجران ایسے بھی ہیں جو اپنے کاروبار کو چلانے کیلئے سود پر قرضہ لئے ہوئے ہیں ،اب ان تمام کے سامنے مسائل کی لمبی قطار ہے۔

About Abdul Rehman

x

Check Also

بلدیاتی اداروں کے انتخابات دومراحل میں فی الحال شیموگہ کارپوریشن انتخابات کی تاریخ کا اعلان نہیں

شیموگہ:۔کرناٹک ریاستی الیکشن کمیشن (کے ایس ای سی )نے مقامی بلدیاتی اداروں کے انتخابات دومراحل ...