نابالغ بچوں پر ان کے والدین یا سرپرستوں کا پورا حق نہیں: سپریم کورٹ

دہلی: 30مئی(انقلاب نیوز بیورو):۔عدالت عظمیٰ نے اس فیصلے کو نا منظور کردیا ہے، جس میں کہا گیا تھا کہ ایک نابالغ بچے پراس کے والدین کاحق ہے۔ فیصلے میں کہا گیا تھا کہ نابالغ اپنی مرضی سے کسی اورکے ساتھ رہنے کی خواہش کااظہار نہیں کرسکتا۔ جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بینچ نے سماعت کے دوران یہ پایا کہ گجرات ہائی کورٹ کی طرف سے کئے فیصلے غلط ہیں۔ایک حالیہ سماعت کے دوران ججوں نے کہا کہ یہ صحیح نہیں ہوسکتا ہے کہ اگر ایک بار کسی نابالغ کے لئے کوئی سرپرست مقرر کردیا جائے تو وہ بچہ اپنی مرضی سے کسی اور کے ساتھ رہنے کی خواہش کااظہار نہیں کرسکتا۔بینچ نے کہا کہ ایسے معاملوں میں بچے کا مفاد سب سے ضروری بات ہے۔ یہ کیسے متعین کیاجاسکتا ہے کہ بچہ اپنی مرضی میں ظاہر نہیں کرسکتا ہے۔ ایک بار جسے سرپرست مقرر کردیاجائے، بچہ ان کی حراست میں رہے گا۔ ہم ان اصولوں کے خلاف ہیں۔سپریم کورٹ گجرات ہائی کورٹ کے اس فیصلہ پر ردعمل ظاہر کررہا تھا، جس میں یہ کہا گیا ہے کہ 18 سال سے کم عمر کے نابالغ کے معاملے میں اس سے متعلق سبھی فیصلے لینے کے اختیار اس کے والدین یا قانون کی طرف سے مقرر کئے گئے دیگر کسی سرپرست کوہے۔ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ اگر نابالغ خود اپنی مرضی سے اپنے سرپرست کے علاوہ کسی اور کے ساتھ رہنا چاہتا ہے تو اس کی حراست سرپرست کی مرضی کے بغیر اسے نہیں دی جاسکتی ہے۔

About Abdul Rehman

x

Check Also

امریکا میں پبلک پارک سے ملکی تاریخ کا سب سے بڑا مگرمچھ برآمد

واشنگٹن:۔امریکی وائلڈ لائف ادارے نے فلوریڈا میں ایک عوامی پارک سے 13 فٹ طویل مگرمچھ ...