نیٹ ورک بزنس شرعاََ جائزنہیں ہے ؛ دارالعلوم دیوبند

دیوبند : دارالعلوم دیوبند نے موجودہ دور میں تیزی کے ساتھ پھیل رہے نیٹ ورک بزنس یا بائنیر ی کے تعلق سے ایک اہم فتویٰ دیا ہے جس میں دارالعلوم کے دارالفتاءنے ایک شخص کی جانب سے پوچھے جانے پر کہ کیا نیٹ وَرک بزنس کرنا صحیح ہے جہاں پر کسی کو بزنس میں جوڑنے کے لیے کمپنی کچھ طے شدہ کمیشن دیتی ہے جس کو بائنری کہا جاتا ہے، اور نیچے ڈاو ن لائن والا کوئی بزنس کو آگے بڑھتا ہے یا ٹرن ا±وَر کرتا ہے اَپ لائن کی مدد سے، تو دونوں کو کچھ کمیشن بھی دیا جاتا ہے، اور دوبارہ خریدنے پر بھی پیسہ دیا جاتا ہے۔ اس سوال کے جواب میں دارالعلوم دیوبند نے کہا ہے کہ اس کاروبار میں جڑ کر نفع کمانا شرعا جائز نہیں ہے ، نیچے والے ممبر کے بزنس کو آگے بڑھانے کی وجہ سے اوپر والے ممبروں کو جو کمیشن ملتا ہے ،وہ ناجائز ہے ، اِس طرح کی کمپنیاں عموما پائدار بھی نہیں ہوتی ہیں، چند لوگ نفع حاصل کر لیتے ہیں اور اکثر لوگ نقصان و خسارے میں رہتے ہیں۔

About Abdul Rehman

x

Check Also

نومبر میں جی ایس ٹی کی وصولیابی میں کمی، حکومت پر یشان

گذشتہ ماہ80 ہزار808 کروڑ روپے جی ایس ٹی وصول کیا گیا۔ اکتوبر کے مقابلے میں2ہزار538 ...